NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Binte zehra ka aasra

Nohakhan: Mir Rehan Abbas


aake sarwar ye bain karte hai
haye zainab nahi raha ghazi

binte zehra ka aasra ghazi
hua karbal may jab juda ghazi
binte zehra ka...

ab bhi binte hussain roti hai
qaid se aake tu chuda ghazi
binte zehra ka...

sar se zainab ki gir gayi chadar
jis ghadi ran ko tu chala ghazi
binte zehra ka...

kund khanjar se shimr yun maare
jaanta hai nahi raha ghazi
binte zehra ka...

meri chadar khuda ka parda hai
meri chadar ki tu baqa ghazi
binte zehra ka...

kaise jaungi shaam aur kufa
mujhko mehmil may tu bitha ghazi
binte zehra ka...

pooche ummul baneen zainab se
kis tarha zeen se gira ghazi
binte zehra ka...

cheh jagah se hussain chun aaye
phir bhi poora na mil saka ghazi
binte zehra ka...

qaime jalte rahe bulaati rahi
shimr se aake tu bacha ghazi
binte zehra ka...

آکے سرور یہ بین کرتے ہیں
ہاے زینب نہیں رہا غازی

بنت زہرا کا آسرا غازی
ہوا کربل میں جب جدا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

اب بھی بنت حسین روتی ہے
قید سے آکے تو چھڑا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

سر سے زینب کی گر گیء چادر
جس گھڑی رن کو تو چلا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

کند خنجر سے شمر یوں مارے
جانتا ہے نہیں رہا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

میری چادر خدا کا پردہ ہے
میری چادر کی تو بقا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

کیسے جاؤں گی شام اور کوفہ
مجھکو محمل میں تو بٹھا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

پوچھے ام البنین زینب سے
کس طرح زین سے گرا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

چھ جگہ سے حسین چن آے
پھر بھی پورا نہ مل سکا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔

خیمے جلتے رہے بلاتی رہی
شمر سے آکے تو بچا غازی
بنت زہرا کا۔۔۔