NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Dukhte hai mere kaan

Nohakhan: Kazmi Brothers
Shayar: Fazal Abbas


bhaiya sajjad
zindan ke andheron se mujhko tu bachale
bhai mujhe aagosh e imamat may chupale

dukhte hai mere kaan sulaado mujhe bhaiya
tum maa ki tarha lori sunaado mujhe bhaiya

lagta hai andhere se darr teri sakina ko
tum sar mere baba ka dilaado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

dekha hai in aankhon ne baba ka gala kat'te
bhoolungi bhala kaise batado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

mai saath moharram se pyasi hoo mere bhaiya
do boond ho gar pani pilaado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

bhaiya mere kano se ab tak lahoo jaari
tum aa ke zara marham lagado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

karta hai sitam zaalim sone bhi nahi deta
aaghosh e imamat may chupado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

sajjad se sakina roke ye fazal boli
chehra mere asghar ka dikhado mujhe bhaiya
dukhte hai mere kaan...

بھیا سجاد
زنداں کے اندھیروں سے مجھ کو تو بچا لے
بھائ مجھے آغوشِ امامت میں چھُپا لے

دُکھتے ہیں میرے کان سُلا دو مجھے بھیا
تُم ماں کی طرح لوری سُنا دو مجھے بھیا

لگتا ہے اندھیرے سے ڈر تیری سکینہ کو
تم سر میرے بابا کا دِلا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔

دیکھا ہے اِن آنکھوں نے بابا کا گلا کٹتے
بھولوں گی بھلا کیسے بتا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔

میں سات محرم سے پیاسی ہوں میرے بھیا
دو بوند ہو گر پانی پلا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔

بھیا میرے کانوں سے اب تک ہے لہو جاری
تُم آکے ذرا مر ہم لگا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔

کرتا ہے ستم ظالم سونے بھی نہیں دیتا
آغوشِ امامت میں چُھپا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔

سجاد سے سکینہ روکے یہ فضل بولی
چہرہ میرے اَصغر کا دِکھا دو مجھے بھیا
دُکھتے ہیں میرے کان۔۔۔