NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Askari maula

Nohakhan: Mesum Abbas
Shayar: Azlan Azmi


ye gham wo gham hai ke dono jahan rote hai
yateem aaj imam e zamaan hote hai

haye hassan askari maula
ay bine zehra askari maula
shaahe saamara askari maula
ay bine zehra askari maula

haye qayamat ki ghadi aa gayi kaisi
saaye se mehroom tere hogaye mehdi
hoke juda rota raha aap ka beta
ay mere baba askari maula
ay bine zehra...

kaisa aseeri ka sitam tumpe hua hai
tere liye ghar tera zindan bana hai
maula tera ghar may hua dafn janaza
haye ghurbata askari maula
ay bine zehra...

saamara har saal chale aate hai zawwar
aap ka taboot uthaate hai azadaar
farshe aza bichta raha bichta rahega
lijiye pursa askari maula
ay bine zehra...

saare azadaron ke lab par ye dua hai
waasta tujhko tere bete ka diya hai
dil may basa rauza tera mehdi ke baba
hum ko bulana askari maula
ay bine zehra...

qaidi o mazloom mere gyaarwe sarkar
dene ko pursa tumhe aaye hai azadaar
pursa qubool ho ay mere syed o sardar
hum log teri nazre karam ke hai talabgaar
gham ye tera dil may sada zinda rahega
roti hai dunya askari maula
ay bine zehra...

jab bhi tere naam ki hoti hai ye majlis
saath may zahra ke chali aati hai narjis
dekh zara mehve buka hai teri zauja
karti hai nauha askari maula
ay bine zehra...

parda e ghaibat may jo beta hai tumhara
bhejein usay jald pareshan hai dunya
sunlo zara behre khuda waaris e kaaba
hai ye ilteja askari maula
ay bine zehra...

mesum o azlan pe bas itna karam ho
naam tere chaahne waalon may raqam ho
kardo ata hum ko sila nauhe ka maula
khwaab ho poora askari maula
ay bine zehra...

یہ غم وہ غم ہے کہ دونوں جہان‌ روتے ہیں
یتیم آج امام زمان ہوتے ہیں

ہاے حسن عسکری مولا
اے بن زہرا عسکری مولا
شاہ سامرہ عسکری مولا
اے بن زہرا عسکری مولا

ہاے قیامت کے گھڑی آ گئ کیسی
ساے سے محروم تیرے ہوگےء مہدی
ہوکے جدا روتا رہا آپ کا بیٹا
اے میرے بابا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

کیسا اسیری کا ستم تم پہ ہوا ہے
تیرے لیےء گھر تیرا زندان بنا ہے
مولا تیرا گھر میں ہوا دفن جنازہ
ہاے غربتا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

سامرہ ہر سال چھالے آتے ہیں زوار
آپ کا تابوت اٹھاتے ہیں عزادار
فرش عزا بچھتا رہا بچھتا رہے گا
لیجئے پرسہ عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

سارے عزاداروں کے لب پر یہ دعا ہے
واسطہ تجھکو تیرے بیٹے کا دیا ہے
دل میں بسا روضہ تیرا مہدی کے بابا
ہم کو بلانا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

قیدی و مظلوم میرے گیارویں سرکار
دینے کو پرسہ تمہیں آے ہے عزادار
پرسہ قبول ہو میرے سید و سردار
ہم لوگ تیری نظر کرم کے ہیں طلبگار
غم یہ تیرا دل میں صدا زندہ رہے گا
روٹی ہے دنیا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

جب بھی تیرے نام کی ہوتی ہے یہ مجلس
ساتھ میں زہرا کے چلی آتی ہے نرجس
دیکھ زرا محو بکا ہے تیری زوجہ
کرتی ہے نوحہ عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

پردہء غیبت میں جو بیٹا ہے تمہارا
بھیجیں اسے جلد پریشان ہے دنیا
سن لو زرا بہر خدا وارث کعبہ
ہے یہ التجا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔

میثم و اذلان پہ بس اتنا کرم ہو
نام تیرے چاہنے والوں میں رقم ہو
کردو عطا ہم کو صلہ نوحے کا مولا
خواب ہو پورا عسکری مولا
اے بن زہرا۔۔۔