NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Ab rehne do

Nohakhan: Ameer Hasan Aamir
Shayar: Shanawar Makanpuri


shamiyon zahra ki hai ye betiyan ab rehne do
kar chuke in par bahot hi sakhtiyan ab rehne do

ab ridayein inki wapas kar do in ko zaalimo
shaam ke bazaar hai aur bastiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

zaalimo tum jaante ho kis khadar maqbool hai
bargaah e rab may ye sab hastiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

aale ahmed ka yehi hai aakhri chashm o chiragh
khol do bemaar ki ye bediyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

ab to na dhao sitam nanhi si jaan par shamiyon
le rahi hai maut ki ye hichkiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

dam nahi itni kahe jo shimr se mat cheeno durr
kehti hai mazlooma ki ye siskiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

lut gaye ahle haram aur jal gaye qaime sabhi
ho gaya pamaal sheh ka aashiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

phat na jaye dil yateema ka sitam ke khauf se
mat dikhao bachi ko yun ghudkiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

padh ke kehta hai ye aamir ay shanawar loh par
likho na mazloomo ki majburiyan ab rehne do
shamiyon zahra ki hai...

شامیوں زہرا کی ہیں یہ بیٹیاں اب رہنے دو
کر چکے ان پر بہت ہی سختیاں اب رہنے دو

اب ردائیں ان کی واپس کر دو ان کو ظالموں
شام کے بازار ہیں اور بستیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

ظالموں تم جانتے ہو کس قدر مقبول ہے
بارگاہِ رب میں یہ سب ہستیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

آل احمد کا ہیی ہے آخری چشم و چراغ
کھول دو بیمار کی یہ بیڑیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

اب تو نہ ڈھاؤ ستم ننھی سی جاں پر شامیوں
لے رہی ہے موت کی یہ ہچکیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

دم نہیں اتنی کہے جو شمر سے مت چھینو در
کہتی ہے مظلومہ کی یہ سسکیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

لٹ گےء اہل حرم اور جل گےء خیمے سبھی
ہو گیا پامال شہ کا آشیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

پھٹ نہ جاے دل یتیمی کا ستم کے خوف سے
مت دکھاؤ بچی کو یوں کھڑکیاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔

پڑھ کے کہتا ہے یہ عامر اے شناور لوح پر
لکھو نہ مظلوموں کی مجبوریاں اب رہنے دو
شامیوں زہرا کی ہیں۔۔۔