NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Ay godiyo ke paale

Nohakhan: Fazl Lakhnavi


ay godiyon ke paale laila ke dil ki dhaaras
islam ki tajalli emaan ke ujaale

bujhti hui jawani ye bhool jaane waale
kaise samajh sakegi wo maut ke ishare
ay godiyon ke paale...

parda pada hua hai kis tarha maa pukare
ay maut ki nazar se aakhein ladane waale
ay godiyon ke paale...

ujde huwe chaman ki khilti kali hai akbar
har saans keh rahi hai tum zindagi ho akbar
ay godiyon ke paale...

ay noor e chasm e laila taqdeer ke ujale

ruqsat ka dil par gham ha akbar salaam le lo
ye aakhri alam hai akbar salaam le lo
ay godiyon ke paale...

jaati hui ada hai ab khatm hai ye naale
hai qaum tum par sadqe jibraeel ke dulaare
ay godiyon ke paale...

islam ke sahare emaan ke shaahzade
ye roshni ata ki athara saal waale
ay godiyon ke paale...

اے گودیوں کے پالے لیلیٰ کے دل کی ڈھارس
اسلام کی تجلی ایمان کے اجالے

بجھتی ہوی جوانی یہ بھول جانے والے
کیسے سمجھ سکے گی وہ موت کے اشارے
اے گودیوں کے پالے۔۔۔

پردہ پڑا ہوا ہے کس طرح ماں پکارے
اے موت کی نظر سے آنکھیں لڑانے والے
اے گودیوں کے پالے۔۔۔

اجڑے ہوے چمن کی کھلتی کلی ہے اکبر
ہر سانس کہہ رہی ہے تم زندگی ہو اکبر
اے گودیوں کے پالے۔۔۔

اے نورِ چشم لیلیٰ تقدیر کے اجالے

رخصت کا دل پر غم ہے اکبر سلام لے لو
یہ آخری الم ہے اکبر سلام لے لو
اے گودیوں کے پالے۔۔۔

جاتی ہوی ادا ہے اب ختم ہے یہ نالے
ہے قوم تم پر صدقے جبریل کے دلارے
اے گودیوں کے پالے۔۔۔

اسلام کے سہارے ایماں کے شاہزادے
یہ روشنی عطا کی اٹھارہ سال والے
اے گودیوں کے پالے۔۔۔