NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Ahle haram may hai

Nohakhan: Fazl Lakhnavi
Shayar: Fazl Lakhnavi


ahle haram may hai rone ki dhoom
wawaila
haye maara gaya sayyed mazloom
wawaila

lut'ta hai ghar jalti hai qanate
rote hai sab bache masoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

desh madina kaahe choda
zahra bhayo ghamnaak
bairi satave ban ma bulawe
bewa udawe khaak
sar se ridayein lete hai wawaila
taane sitamgar dete hai wawaila
koi nahi hai sar par waaris
kisko pukare ye mazloom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

ek chadarwa deth na koi
sharm bhari sharmaye
chupke chupke rowat rowat
haath kadi bandhwaye
sehti hai kulsoom aah mehan wawaila
baazu e zainab aur rasan wawaila
betiyan zehra aur ali ki
aaj ye kaisa hai maqsoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

soye zameen par saare baraati
byahu na aayo raas
pagdi kahat hai qasim dulha
todi hamari aas
qaid huwi ek shab ki dulhan wawaila
lut gaya kangna baandhi rasan wawaila
roti hai zainab khaak uda kar
dekhti hai umme kulsoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

karbal ban ma loot machi hai
bindri kare faryaad
soye sab pardes ma musafir
desh bhayo barbaad
bachon ko koi roti hai wawaila
bewa koi jaan khoti hai wawaila
kehti hai bano asghar jaani
chida tera nazuk halqoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

aur dukhawe dukhte dil ko
taras na koi khaaye
dukh ma satave qaidi banave
laakh dukhi chillaye
tauq pinaya abid ko wawaila
kehte hai isko chain na do wawaila
tan may hai tap aur bediyan bhaari
kaisi bala may hai mazloom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

koi na aawe koi na pooche
koi na deve daad
man may jaisu aave machave
zulm kare jallad
sab ko bithaya ooton par wawaila
di na kisi ko ek chadar wawaila
shaam ko mazloom aah chala hai
leke haram ko lashkare shoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

jaan ko sulawe chaati upar
zahra ka dildaar
wan ko litawe dharti bheetar
maare shimr har baar
baliyan cheeni bachi ki wawaila
us par eeza aur bhi di wawaila
kaan phate hai khoon hai behta
tadapte hai bache masoom wawaila
ahle haram may hai..
haye maara gaya sayyed...

اہل حرم میں ہے رونےکی دھوم
واویلا
ہاے مارا گیا سید مظلوم
واویلا

لوٹتا ہے گھر جلتی ہے قناتیں
روتے ہیں سب بچے معصوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

دیش مدینہ کاہے چھوژا
زہرا بھیو غمناک
بیری ستاوے بن ما بلاوے
بیوہ اُڑاوے خاک
سر سے ردایں لیتے ہیں واویلا
طعنے ستمگر دیتے ہیں واویلا
کوی نہیں ہے سر پر وارث
کسکو پکارے یہ مظلوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

ایک چدروہ دیت نہ کوی
شرم بھری شرماے
چپکے چثکے رووت رووت
ہاتھ کٹی بندھواے
سہتی ہے کلثوم آہ محن واویلا
باذوے زینب اور رسن واویلا
بیٹیاں زہرا اور علی کی
آج یہ کیسا ہے مقسوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

سوے زمین پر سارے براتی
بیاہو نہ آیو راس
پگدی کہت ہے قاسم دولہا
توڑی ہماری آس
قید ہئی اک شب کی دلہن واویلا
لٹ گیا کن٘گنا باندھی رسن واویلا
روتی ہے زینب خاک اڑا کر
دیکھتی ہے اُمِ کلثوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

کربل بن ما لوٹ مچی ہے
بندری کرے فریاد
سوے سب پردس ما مسافر
دیش بھیو برباد
بچوں کو کوی روتی ہے واویلا
بیوہ کوی جاں کھوتی ہے واویلا
کھتی ہے بانو اصغر جانی
چھیدا تیرا نازک حلقوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

اور دکھاوے دکھتے دل کو
ترس نہ کوی کھاے
دکھ ما ستاوے قیدی بناوے
لاکھ دکھی چللاے
طوق پہنایا عابد کو واویلا
کھتے ہے اسکو چین نہ دو واویلا
تن میں ہے تپ اور بیڑیاں بھاری
کیسی بلا میں ہے مظلوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

کوی نہ آوے کوی نہ پوچھے
کوی نہ دیوے داد
من میں جیسو آوے مچاوے
ظلم کرے جلاد
سب کو بٹھایا اونٹوں پر واویلا
دی نہ کسی کو اک چادر واویلا
شام کو مظلوم آہ چلا ہے
لےکے حرم کو لشکر شوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔

جان کو سلاوے چھاتی اوپر
زہرا کا دلدار
واں کو لِٹاوے دھرتی بھیتر
مارے شمر ہر بار
بالیاں چھینی بچی کی واویلا
اُس پر ایزا اور بھی دی واویلا
کان پھٹے ہیں خون ہے بہتا
تٹثتے ہیں بچی معصوم واویلا
اہل حرم میں ہے۔۔۔
ہاے مارا گیا سید۔۔۔