NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Haye hassan maula

Nohakhan: Farhan Ali Waris
Shayar: Mazhar Abidi


zehra ka jigar paara hyder ka dulaara
haye hassan maula

nikla hai tera ghar se do baar janaza
haye hasan maula haye hasan maula

jodha ne jigar tukde kar daala tumhara
hyder ki adawat ka liya tumse hai badla
is zulm se karbal ka aaghaaz hua tha
haye hasan maula...
nikla hai tera ghar se...

shabbir pe aur tujhpe ek jaisa sitam tha
yan teer janaze par wahan teeron pe laasha
do baar hua tukde zehra ka kaleja
haye hasan maula...
nikla hai tera ghar se...

teeron se bhara laasha ghar laut ke aaya
pehchaan nahi paayi zainab tera laasha
dil thaam ke zainab ne har teer nikala
haye hasan maula...
nikla hai tera ghar se...

tukde tha jigar tera jis tarha se maula
qasim ka badan tukde usi tarha hua tha
pooche koi ummat se kya jurm tha tera
haye hasan maula...
nikla hai tera ghar se...

chauda sau baras beete ye zakhm hai taaza
farhan ho ya mazhar sab karte hai nauha
ta hashr tere gham may royegi ye dunya
haye hasan maula...
nikla hai tera ghar se...

زہرا کا جگر پارہ حیدر کا دلارا
ہاے حسن مولا

نکلا ہے تیرا گھر سے دو بار جنازہ
ہاے حسن مولا ہاے حسن مولا

جعدہ نے جگر ٹکڑے کر ڈالا تمہارا
حیدر کی عداوت کا لیا تم سے ہے بدلہ
اس ظلم سے کربل کا آغاز ہوا تھا
ہاے حسن مولا۔۔۔
نکلا ہے تیرا گھر سے۔۔۔

شبیر پہ اور تجھ پہ ایک جیسا ستم تھا
یاں تیر جنازے پر وہاں تیروں پہ لاشہ
دو بار ہوا ٹکڑے زہرا کا کلیجہ
ہاے حسن مولا۔۔۔
نکلا ہے تیرا گھر سے۔۔۔

تیروں سے بھرا لاشہ گھر لوٹ کے آیا
پہچان نہیں پائی زینب تیرا لاشہ
دل تھام کے زینب نے ہر تیر نکالا
ہاے حسن مولا۔۔۔
نکلا ہے تیرا گھر سے۔۔۔

ٹکڑے تھا جگر تیرا جس طرح سے مولا
قاسم کا بدن ٹکڑے اسی طرح ہوا تھا
پوچھے کوئی امت سے کیا جرم تھا تیرا
ہاے حسن مولا۔۔۔
نکلا ہے تیرا گھر سے۔۔۔

چودہ سو برس بیتے یہ زخم ہے تازہ
فرحان ہو یا مظہر سب کرتے ہیں نوحہ
تا حشر تیرے غم میں روے گی یہ دنیا
ہاے حسن مولا۔۔۔
نکلا ہے تیرا گھر سے۔۔۔