NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Ghar ko choda

Reciter: Alamdar Razvi


ghar ko choda shaah ne jangal basane ke liye
karbala may aaye thay jannat may jaane ke liye

zohr ko zainab se jab milne gaye ghar may hussain
koi dweodi par na tha parda uthane ke liye
ghar ko choda shah ne...

sheh uthe pad kar namaze subah mehshar hogaya
hazrate zainab chali kapde pehnane ke liye
ghar ko choda shah ne...

kehti thi maa khat mere akbar ko tha paighame marg
ye jawani aayi thi goya bhulaane ke liye
ghar ko choda shah ne...

thi sada zehra ki zainab margaya tera hussain
ghar my jaa beti safay matam bichane ke liye
ghar ko choda shah ne...

گھر کو چھوڑا شاہ نے جنگل بسانے کے لئے
کربلا میں آے تھے جنت میں جانے کے لئے

ظہر کو زینب سے جب ملنے گےء گھر میں حسین
کوئی دیوڑھی پر نہ تھا پردہ اٹھانے کے لئے
گھر کو چھوڑا شاہ نے۔۔۔

شہ اٹھے پڑھ کر نماز صبح محشر ہو گیا
حضرت زینب چلی کپڑے پہنانے کے لئے
گھر کو چھوڑا شاہ نے۔۔۔

کہتی تھی ماں خط میرے اکب کو تھا پیغام مرگ
یہ جوانی آی تھی گویا بلانے کے لئے
گھر کو چھوڑا شاہ نے۔۔۔

تھی صدا زہرا کی زینب مرگیا تیرا حسین
گھر میں جا بیٹھی صف ماتم بچھانے کے لئے
گھر کو چھوڑا شاہ نے۔۔۔