NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Bole beti se sibte

Reciter: Mir Azhar Ali


bole beti se sibte payambar
baad mere na rona sakina
zid na karna mujhe yaad karke
maa ki godi may sona sakina

hum bahot door jayenge bibi
ab na surat dikhayenge bibi
hum agar yaad aayenge bibi
tum na bechain hona sakina

baad mere tu dukhyari hogi
tujhko eeza badi pyari hogi
zindagi phir tujhe bhaari hogi
tujhko hai qaid hona sakina

shimr kodon se dega aziyath
aur tamachon se hogi himayath
tumko dega yateemi may zehmat
yaad apni na khona sakina

meri furkhat may girya kare gar
ya unhe yaad aajaye asghar
maa ko rone na dena tu dilbar
moo pe moo rakh ke sona sakina

laash par meri jab tum lipat kar
ro'ogi meri ay jaane dukhtar
kode maarega shimr e badakhtar
hai ye sab tumko sehna sakina

bibi aaye tumhe gar meri yaad
roke karna na tum zaar o faryad
warna tum par bahot hogi bedaar
maar khana na rona sakina

بولے بیٹی سے سبط پیمبر
بعد میرے نہ رونا سکینہ
ضد نہ کرنا مجھے یاد کرکے
ماں کی گودی میں سونا سکینہ

ہم بہت دور جایں گے بی بی
اب نہ صورت دکھائیں گے بی بی
ہم اگر یاد آیں گے بی بی
تم نہ بے چین ہونا سکینہ

بعد میرے تو دکھیاری ہوگی
تجھکو ایذا بڑی پیاری ہوگی
زندگی پھر تجھے بھاری ہوگی
تجھکو ہے قید ہونا سکینہ

شمر کوڑوں سے دیگا اذیت
اور طمانچوں سے ہوگی حمایت
تم کو دیگا یتیمی میں زحمت
یاد اپنی نہ کھونا سکینہ

میری فرقت میں گریہ کرے گر
یا انہیں یاد آجائے اصغر
ماں کو رونا نہ دینا تو دلبر
منہ پہ منہ رکھ کے سونا سکینہ

لاش پر میری جب تم لپٹ کر
روؤ گی میری اے جان دختر
کوڑے ماریں گے شمر بد اختر
ہے یہ سب تم کو سہنا سکینہ

بی بی آے تمہیں گر میری یاد
روکے کرنا نہ تم زار و فریاد
ورنہ تم پر بہت ہوگی بے دار
مار کھانا نہ رونا سکینہ