NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Bas ek rishta hussain

Nohakhan: Shadman Raza
Shayar: Majid Raza Abdi


kashtiye deene khuda ka na-khuda hussain
ya hussain ya hussain

hame na jaah o saltanat na taqt o taaj chahiye
baland tha jo taqt se magar mizaaj chahiye
shaheede karbala ka bas dilon pe raj chahiye
ya hussain ya hussain

hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

zohair o muslim ibne ausaja shabeeb ki tarha
janabe hurr ke aur john ke naseeb ki tarha
hame ye faqr hai ke hazrate habeeb ki tarha
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

hai kaun apna chaara gar hussain hai hussain hai
hai kaun humse ba-khabar hussain hai hussain hai
hai kaun apna raahbar hussain hai hussain hai
hai kaun dil may jalwagar hussain hai hussain hai
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

har ek simt dehr may ya hussain ki nida
har ek qaum ki har ek deen ki bhi hai sada
kamaal to ye hai ke bud parast bhi ye bol utha
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

hamara chaara gar nahi koi hussain ke siwa
hamara ba-khabar nahi koi hussain ke siwa
hamara raahbar nahi koi hussain ke siwa
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

ye wo hussain hai mila hai jisko doshe mustufa
yehi waqaar e arsh hai yehi hai naaze kibriya
ana minal hussain kehke ye nabi ne keh diya
isi sabab se aaj hum bhi de rahe hai ye sada
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

hussain ko dilon may tum bithalo ay hussainiyo
hussain ko nazar may tum basalo ay hussainiyo
ye kehke apna dehr ko banalo ay hussainiyo
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

samaan se leke ta samak hussain hi hussain ho
zameen se aasman talak hussain hi hussain ho
jahan jahan falak falak hussain hi hussain ho
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

jahan pe gham hussain ka wahan pe bhi siyasatein
jahan pe gham hussain ka wahan pe bhi kadooratein
khuda ke waaste mita do dil ki ye ghalazatein
munafiqat ko chod kar payak zaban yehi kahein
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

rahenge yaume hashr bhi wohi to log shadman
ghame hussain may jo kar rahe hai naala o fughaan
ay majid apne paas aa na payega ghame jahan
hamara rishta hussain se hai
bas ek rishta hussain se hai

کشتیء دین خدا کا نا خدا حسین ہے
یا حسین یا حسین

ہمیں نہ جاہ و سلطنت نہ تخت و تاج چاہیے
بلند تھا جو تخت سے مگر مزاج چاہیے
شہید کربلا کا بس دلوں پہ راج چاہیے
یا حسین یا حسین

ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

زہیر و مسلم ابن عوسجہ شبیب کی طرح
جناب حر کے اور جون کے نصیب کی طرح
ہمیں یہ فقر ہے کہ حضرت حبیب کی طرح
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

ہے کون اپنا چارہ گر حسین ہے حسین ہے
ہے کون ہم سے با خبر حسین ہے حسین ہے
ہے کون اپنا راہ بر حسین ہے حسین ہے
ہے کون دل میں جلوہ گر حسین ہے حسین ہے
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

ہر ایک سمت دہر میں یا حسین کی ندا
ہر ایک قوم کی ہر ایک دین کی بھی ہے صدا
کمال تو یہ ہے کہ بت پرست بھی یہ بول اٹھا
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

ہمارا چارہ گر نہیں کوئی حسین کے سوا
ہمارا با خبر نہیں کوئی حسین کے سوا
ہمارا راہ بر نہیں کوئی حسین کے سوا
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

یہ وہ حسین ہے ملا ہے جسکو دوش مصطفیٰ
یہ وقار عرش ہے یہی ہے ناز کبریا
انا من الحسین کہہ کے یہ نبی نے کہہ دیا
اسی سبب سے آج ہم بھی دے رہے ہیں صدا
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

حسین کو دلوں میں تم بٹھالو اے حسینیوں
حسین کو نظر میں تم چھپالو اے حسینیوں
یہ کہہ کے اپنا دہر کو بنالو اے حسینیوں
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

سماں سے لیکے تا سمک حسین ہی حسین ہوں
زمیں سے آسماں تلک حسین ہی حسین ہوں
جہاں جہاں فلک فلک حسین ہی حسین ہوں
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

جہاں پہ غم حسین کا وہاں پہ بھی سیاستیں
جہاں پہ غم حسین کا وہاں پہ بھی کدورتیں
خدا کے واسطے مٹا دو دل کی یہ غلاظتیں
منافقت کو چھوڑ کر پیک زباں یہی کہیں
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے

رہیں گے یوم حشر بھی وہی تو لوگ شادماں
غم حسین میں جو کر رہے ہیں نالہ و فغاں
اے ماجد اپنے پاس آ نہ پاے گا غم جہاں
ہمارا رشتہ حسین سے ہے
بس ایک رشتہ حسین سے ہے