NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Sar peetkar basheer

Nohakhan: Mir Rehan Abbas
Shayar: Hilal Mirza


logon madina rehne ke khaabil nahi raha
sar peet kar basheer kehta hua chala

rote huwe basheer ne elaan ye kiya
maare gaye hussain payambar ka ghar luta
qaidi banaya aale mohamed ko bekhata
wapas watan ko aaye hai bemaare karbala
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

bedast nehr par huwe abbas e bawafa
naiza shabiye ahmed-e-mukhtaar ko laga
baysheer ke galay pe bhi teere sitam laga
pamaal ran may qasime naushaah ho gaya
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

jee bhar ke zaalimo ne sataya hussain ko
pyasa kiya shaheed shahe mashraqain ko
pani diya na fatema ke noor-e-ain ko
pyase galay pa shimr ne khanjar chala diya
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

shaam e ghariban ek qayamat hui bapa
asbaab saara loot liya ghar bhi jala diya
cheeni hai sar se zainab-o-kulsoom ki rida
aale nabi ko qaid kiya wa musibata
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

qaidi banaya zainab-e-muztar ko al-amaan
aur be-kajawa oonton pe thi saari bibiyan
pehne huwe thay sayyede sajjad bediyan
ahle haram ka khaafla bazaar may gaya
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

qabre rasool hil gayi zainab ne jab kaha
nana teri nawasi ke sar par na thi rida
darbar e shaam may hamay leja ke bekhata
ummat ne khoob ajre risaalat ada kiya
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

maqbool ho hilal aur rehan ki dua
naslon may apne baakhi rahe gham hussain ka
deti rahe duayein hamay binte mustafa
saaman ho ye hashr may apni nijaat ka
logon madina rehne...
sar peetkar basheer...

لوگوں مدینہ رہنے کے قابل نہیں رہا
سر پیٹ کر بشیر کہتا ہواچلا

روتے ہوئے بشیر نے اعلان یہ کیا
مارے گئے حسین پیمبر کا گھر لٹا
قیدی بنایا آل محمد کو بے خطا
واپس وطن کو آے ہیں بیمار کربلا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

بے دست نہر پر ہوے عباس با وفا
نیزہ شبیہ احمد مختار کو لگا
بے شیر کے گلے پہ بھی تیر ستم لگا
پامال رن میں قاسم نوشاہ ہو گیا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

جی بھر کے ظالموں نے ستایاحسین کو
پیاسا کیا شہید شہ مشرقین کو
پانی دیا نہ فاطمہ کے نور عین کو
پیاسے گلے پہ شمر نے خنجر چلا دیا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

شام غریباں ایک قیامت ہوی بپا
اسباب سارا لوٹ لیا گھر بھی جلا دیا
چھینی ہے سر سے زینب و کلثوم کی ردا
آل نبی کو قید کیا وا مصیبتا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

قیدی بنایا زینب مضطر کو الاماں
اور بے کجاوا اونٹوں پر تھی ساری بی بیاں
پہنے ہوئے تھے سید سجاد بیڑیاں
اہل حرم کا قافلہ بازار میں گیا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

قبر رسول ہل گیء زینب نے جب کہا
نانا تیری نواسی کے سر پر نہ تھی ردا
دربار شام میں ہمیں لے جا کے بے خطا
امت نے خوب اجر رسالت ادا کیا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر

مقبول ہو ہلال اور ریحان کی دعا
نسلوں میں اپنے باقی رہے غم حسین کا
دیتی رہے دعائیں ہمیں بنت مصطفیٰ
سامان ہو یہ حشر میں اپنی نجات کا
---لوگوں مدینہ رہنے
---سر پیٹ کر بشیر