سجاد میں زینب ہوں میرے سر پہ ردا کوئی نہیں بازارِ جفا
مجمع ہے کوفیوں کا میرے چلنے کی جا کوئی نہیں

سجاد میرے سر سے نو بار چھینی چادر
بلوے میں نبی زادی پھروائی گئی دردر
مل جائے ردا مجھ کو اور میری دعا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

سجاد میرے دل کو یہ درد ستاتا ہے
سر غازی کا نیزے سے جب خاک پہ آتا ہے
سر میرا کھُلا دیکھ کے غم اس سے بڑا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

سجاد چلوں کیسے لاکھوں ہیں تماشائی
یاد آتا رہ رہ کے عباس میرا بھائی
فریاد کروں تجھ سے اب تیرے سوا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

معلوم ہے اعدا کو غازی کی بہن میں
بے دست ہے وہ غازی پابندِ رسن ہوں میں
یاد آئی وفا اُس کی جب پاس رہا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

سجاد تیری حالت دیکھی نہیں جاتی ہے
بے پردہ مجھے دیکھے یہ بات رُلاتی ہے
سجاد تیری طرح کانٹوں پہ چلا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

جاتا ہے سوئے زنداں اب کنبہ محمد کا
رسی میں بندھے قیدی کانٹوں سے بھرا رستہ
اُمت نے ستم ڈھائے قسمت سے گِلاکوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

موت آئے گی زنداں میں میری بالی سکینہ کو
کیا جا کے بتائوں گی بیمارِ مدینہ کو
غم دل کے اُٹھانے کو اب باقی بچا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔

بازارِ ستم میں تھا زینب کا عجب عالم
مظہر میں لکھوں کیسے ظالم نے کہا جس دم
ہے کون تیرا وارث زینب نے کہا کوئی نہیں بازارِ جفا
سجاد میں زینب ۔۔۔۔۔


sajjad mai zainab hoo mere sar pe rida koi nai bazaare jafa
majma hai koofiyo ka mere chalne ki jaa koi nai

sajjad mere sar se nau baar chini chadar
balwe may nabi zaadi phirwayi gayi dar dar
miljaye rida mujko aur meri dua koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

sajjad mere dil ko ye dard satata hai
sar ghazi ka naize se jab khaakh pe aata hai
sar mera khula dekh ke gham issay bada koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

sajjad chaloon kaise lakhon hai tamashayi
yaad aata hai reh reh ke abbas mera bhai
faryad karoon tujhse ab tere siwa koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

maloom hai aada ko ghazi ki bahan hoo mai
be-dast hai wo ghazi pabande rasan hoo mai
yaad aayi wafa uski jab paas raha koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

sajjad teri haalat dekhi nahi jaati hai
be-parda mujhe dekhe ye baat rulaati hai
sajjad teri tarha kanton pe chal koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

jaata hai suye zindan ab kunba mohamed ka
rassi may bandhe qaidi kanton se bhara rasta
ummat ne sitam dhaaye kismat se gila koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

maut aayegi zindan may meri bali sakina ko
kya jaake bataungi bemaar e madina ko
gham dil ke uthane ko ab baakhi bacha koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....

bazare sitam may tha zainab ka ajab aalam
mazhar mai likhoo kaise zaalim ne kaha jis dam
hai kaun tera waaris zainab ne kaha koi nai bazare jafa
sajjad mai zainab....
Noha - Sajjad Mai Zainab Hoo
Shayar: Mazhar Abidi
Nohaqan: Safdar Abbas
Download Mp3
Listen Online