پردہ دُنیا کو سیکھانے والی آئی بازاروں میں زینب
گھر سے باہر بھی نہ آنے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

جس نے بابا سے چھُڑائے تھے کئی بار اسیر
قیدی آزاد کرانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

جلتے خیموں سے اُٹھا لائی عباس کے بعد
علی عابد کو بچانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

دین کی خاطر یہ بی بی سالار بنی
بن کے عباس دیکھانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

اپنے سینے پہ سکینہ کو زندانوں میں
بعد بھائی کے سُلانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

ننگے سر پڑھتی رہی خطبے بازاروں میں
قصرِ دشمن کو ہلانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔

کُوفی اور شامی بھی سارے گئے یہ مان جوہر
عظمتِ دیں کو بڑھانے والی آئی بازاروں میں زینب
پردہ دُنیا کو سیکھانے ۔۔۔۔۔


parda duniya ko sikhane wali aayi bazaaron may zainab
ghar se bahar bhi na aane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

jisne baba se chudae-thay kayi baar aseer
qaidi azaad karane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

jalte qaimon se utha laayi abbas ke baad
ali aabid ko bachane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

deen ki khaatir ye bibi salaar bani
banke abbas dikhane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

apne seene pe sakina ko zindano may
baad bhai ke sulaane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

nange sar padti rahi khutbe bazaaron may
kasre dushman ko hilane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...

kufe aur shaam bhi saare gaye ye baali johar
azmate deen ko badhane wali aayi bazaaron may zainab
parda duniya ko sikhane...
Noha - Parda Dunya Ko
Shayar: Jauhar Shah
Nohaqan: Raza Abbas Naqvi
Download Mp3
Listen Online