دی بشیر نے رو کے یہ صدا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
گُل ہوا چراغ لو مدینے کا
لُٹ گئے حرم مر گئے حُسین

وہ مُجاورِ روضئہ نبی
اس مدینے کی جسے زیب تھی
خاک میں اُسے لو ملا دیا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔

دو پہاڑ تلک صاف گھر ہوا
عصر کو کٹا شاہ کا گلا
بعدِ قتل شاہ خیمہ جل گیا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔

ناتواں نے ہائے پہنی بیڑیاں
ہو گئیں اسیر ساری بیبیاں
قید کی گئی آلِ مصطفیٰ
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔

بیووں کو کیا اونٹوں پر سوار
دی مریض کے ہاتھ میں میہار
منزلوں غریب کانٹوں پہ چلا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔

مِٹ گئی جو ہائے شکلِ مصطفیٰ
زندگی سے ہاتھ شِہ نے دھو دیا
رن میں نوجواں شِہ کا مر گیا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔

تیر سے چھِد ا حلقِ بے زباں
مر گیا صغیر لے کے ہچکیاں
نارِ ظلم سے جھولا جل گیا
لٹ گئے حرم مر گئے حسین
دی بشیر نے ۔۔۔۔۔


di basheer ne roke ye sada
lut gaye haram mar gaye hussain
gul hua charaag lo madina ka
lut gaye haram mar gaye hussain

wo mujaware rowza-e-nabi
is madine ki jisse zeb thi
khaak may usay lo mila diya
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....

do pahar talak saaf ghar hua
asr ko kata shah ka gala
baade qatl shah qaima jal gaya
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....

natawan ne haaye pehni bediyan
hogayi aseer saari bibiyan
qaid kigayi aale mustufa
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....

bewon ko kiya unton par sawaar
di mareez ke haat may mehaar
manzilon ghareeb kanton par chala
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....

mit gayi jo haaye shakle mustufa
zindagi se haath sheh ne dhodiya
ran may nowjawan sheh ka margaya
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....

teer se chida halqe bezaban
margaya sagheer leke hichkiyan
naare zulm se jhoola jal gaya        
lut gaye haram mar gaye hussain
di basheer ne....
Noha - Di Basheer Ne