چادریں مانگیں تو ہر شہرسے  آے پتھر
بنت زھرا نے کہاں پر نہیں کھاےُ پتھر
بنت زھرا نے


سر جھکاےً ہوےً روتی ہے علی کی بیٹی
اور لعیں ہنستے ہیں ہاتھوں میں اٹھاےً پتھر
بنت زھرا نے...

کیا کریمی ہے کے بازار میں چلتے چلتے
خون سجاد نے یاقوت بنا َے پتھر
بنت زھرا نے...

ہاتھ تو تیرے پس ‍‍پشت بندھے تھے زینب
کیسے پھر بھائی کے لاشے سے ہٹا ے پتھر
بنت زھرا نے...

یہ تو انصاف نہیں جس نے بچایا اسلام
اسکی بیٹی بھرے بازار میں کھاے پتھر
بنت زھرا نے...

طعنے دے دے کے کیا زخمی دل زینب کو
ہا ے کچھ مسلمانوں کے جب ہاتھ نہ اے پتھر
بنت زھرا نے...

تیرا بھائی نہ رہا بنت علی ہا ے غضب
ورنہ ممکن تھا کوئی تجھ پہ اٹھا ے پتھر
بنت زھرا نے...

خون ٹپکا تھا سر شاہ سے اس پر سجاد
خون پھر کیے حلب میں نہ بہا ے پتھر   
بنت زھرا نے...


چادریں مانگیں تو ہر شہرسے  آے پتھر
بنت زھرا نے کہاں پر نہیں کھاےُ پتھر

سر جھکاےً ہوےً روتی ہے علی کی بیٹی
اور لعیں ہنستے ہیں ہاتھوں میں اٹھاےً پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

کیا کریمی ہے کے بازار میں چلتے چلتے
خون سجاد نے یاقوت بنا َے پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

ہاتھ تو تیرے پس ‍‍پشت بندھے تھے زینب
کیسے پھر بھائی کے لاشے سے ہٹا ے پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

یہ تو انصاف نہیں جس نے بچایا اسلام
اسکی بیٹی بھرے بازار میں کھاے پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

طعنے دے دے کے کیا زخمی دل زینب کو
ہا ے کچھ مسلمانوں کے جب ہاتھ نہ اے پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

تیرا بھائی نہ رہا بنت علی ہا ے غضب
ورنہ ممکن تھا کوئی تجھ پہ اٹھا ے پتھر
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں

خون ٹپکا تھا سر شاہ سے اس پر سجاد
خون پھر کیے حلب میں نہ بہا ے پتھر   
بنت زھرا نے
چادریں مانگیں


چادریں مانگیں تو ہر شہرسے  آے پتھر
بنت زھرا نے کہاں پر نہیں کھاےُ پتھر
بنت زھرا نے


سر جھکاےً ہوےً روتی ہے علی کی بیٹی
اور لعیں ہنستے ہیں ہاتھوں میں اٹھاےً پتھر
بنت زھرا نے...

کیا کریمی ہے کے بازار میں چلتے چلتے
خون سجاد نے یاقوت بنا َے پتھر
بنت زھرا نے...

ہاتھ تو تیرے پس ‍‍پشت بندھے تھے زینب
کیسے پھر بھائی کے لاشے سے ہٹا ے پتھر
بنت زھرا نے...

یہ تو انصاف نہیں جس نے بچایا اسلام
اسکی بیٹی بھرے بازار میں کھاے پتھر
بنت زھرا نے...

طعنے دے دے کے کیا زخمی دل زینب کو
ہا ے کچھ مسلمانوں کے جب ہاتھ نہ اے پتھر
بنت زھرا نے...

تیرا بھائی نہ رہا بنت علی ہا ے غضب
ورنہ ممکن تھا کوئی تجھ پہ اٹھا ے پتھر
بنت زھرا نے...

خون ٹپکا تھا سر شاہ سے اس پر سجاد
خون پھر کیے حلب میں نہ بہا ے پتھر   
بنت زھرا نے...


chaadarein maangi to har shehr aaye pathar
binte zehra ne kahan par nahi khaaye pathar

sar jhukaye huye roti hai ali ki beti
aur layeen haste hai haaton may uthaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

kya kareemi hai ke bazaar may chalte chalte
khoone sajjad ne yaqoot banaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

haath to tere pasay pusht bandhe thay zainab
kaise phir bhai ke laashe se hataye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

ye to insaf nahi jisne bachaya islam
uski beti bhare bazaar may khaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

taane de de ke kiya zakhmi dile zainab ko
haye kuch musalmano ke jab haath na aaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

tera bhai na raha binte ali haye ghazab
warna mumkin tha koi tujpe uthaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...

khoon tapka tha sare shaah se us par sajjad
khoon phir kaise halab may na bahaye pathar
binte zehra ne...
chaadarein maangi...
Noha - Chaadarein Maangi

Nohaqan: Mir Hassan Mir
Download Mp3
Listen Online