بوسہ گاہِ احمد پر شمشیر نظر آئی
یوں خوابِ خلیلی کی تعبیر نظر آئی

کیا حُر کی بصیرت تھی جس کو شبِ اسیاں میں
تقدیر بنانے کی تدبیر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر۔۔۔

اشکِ غمِ سرور کے آئینہِ روشن میں
جنت بھی ہمیں اپنی جاگیر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر ۔۔۔


جس خاک پہ سوئے ہیں زہرا کے جگر پارے
وہ خاک دو عالم کو اکسیر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر ۔۔۔
بچے کی طرف ظالم کیوں تیر چلایا ہے
معصوم کی کیا تجھ کو تقسیر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر ۔۔۔

اغیار بھی تو اُٹھے مُنہ پھیر کے راہوں میں
جب پائوں میں عابد کے زنجیر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر ۔۔۔

آنسُو غمِ سرور میں نکلے جو عروج اپنے
ہر اشک میں کوثر کی تصویر نظر آئی
بوسہ گاہِ احمد پر ۔۔۔


bosagahe ahmed par shamsheer nazar aayi
yun khwab khaleeli ki tabeer nazar aayi

kya hur ki basirat thi jisko shabe isiyan may
taqdeer banane ki tadbeer nazar aayi
bosagahe ahmed par....

ashke ghame sarwar ke aaina ye raushan may
jannat bhi hamay apni jageer nazar aayi
bosagahe ahmed par....

jis khaak pe soye hai zehra ke jigar paare
wo khaak do aalam ko akseer nazar aayi
bosagahe ahmed par....

bache ki taraf zaalim kyun teer chalaya hai
masoom ki kya tujhko taqseer nazar aayi
bosagahe ahmed par....

aghiyar bhi ro uthe moo phayr ke raahon may
jab paon may abid ke zanjeer nazar aayi
bosagahe ahmed par....

aansu ghame sarwar may nikle jo urooj apne
har ashk may kausar ki tasveer nazar aayi
bosagahe ahmed par....
Noha - Bosagahe Ahmed Par
Shayar: Urooj Bijnori
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online