رسن میں بندھ چکا گلا لو چل پڑا وہ قافلہ
بہن غریب نوحہ گر سناں پہ جب پڑی نظر
خاموش تھے شہید سب اخی کے ہل رہے تھے لب
سناں پہ ہوں تو کیا ہوا تُو حوصلہ نہ ہارنا
بہن میں ساتھ ساتھ ہوں

غریبِ کربلا بہن
دلیرو باوفا بہن
غموں کی علقمہ بہن
میری مسافرہ بہن
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

وفا ئے وعدہ ہوچکا
سناں تلک میں آگیا
میں اپنا کام کرچکا
میری شریکِ کربلا
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

یہ رسیاں یہ بیڑیاں
قدم قدم پہ سختیاں
ردا بغیر بیبیاں
بہن کڑاہے امتحاں
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

اگر ہے راستہ کٹھن
ذرا نہ ڈر میری بہن
تُو بے ردا میں بے کفن
ہے وقت حوصلہ شکن
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

قدم قدم شہادتیں
گزر گئیں قیامتیں
ابھی ہیں اور آفتیں
سنبھال اب امانتیں
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

کوئی بھی اب نہیں بچا
بس عابدِ شکستہ پا
یہ ساریبانِ غم زدا
گرے جو کھا کے غش زرا
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

بہن ٹھہرٹھہر یہیں
لرز رہی ہے کیوں زمیں
سکینہ گرگئی کہیں
نہ مِل سکے جو وہ حزیں
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

بہت قریب شام ہے
ہجومِ خاص وعام ہے
یزید بد کلام ہے
یہ وقتِ انتقام ہے
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔

ریحان وسرورِعزا
جو شام پہنچا قافلہ
سرِ حسین نے کہا
اُلٹ دے تخت شام کا
تُو حوصلہ نہ ہارنا
سناں پہ ہوں تو کیا۔۔۔
بہن میں ساتھ۔۔۔


rasan may bandh chuka gala lo chal pada wo khafila
behan ghareeb nawhagar sina pe jab padi nazar
khamosh thay shaheed sab aqi ke hil rahe thay lab
sina pe ho to kya huwa tu hausla na haarna
behan mai saath saath hoo

ghareebe karbala behan
diler e ba-wafa behan
ghamo ki alqama behan
meri musafira behan
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

wafae wada ho chuka
sina talak mai aagaya
mai apna kaam kar chuka
meri shareeke karbala
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

ye rassiyan ye bediyan
qadam qadam be sakhtiyan
rida baghair bibiyan
behan kada hai imtehan
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

agar hai raasta kathan
zara na darr meri behan
tu berida mai bekafan
hai waqt hausla shikan
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

qadam qadam shahadatein
guzar gayi qayamatein
abhi hai aur aafatein
sambhaal ab amaanatein
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

koi bhi ab nahi bacha
bas abid e shakista pa
ye saare baane ghamzada
giray jo khaake ghash zara
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

behan teher teher yahin
laraz rahi hai kyun zameen
sakina girgayi kahin
na mil sake jo woh hazeen
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

bahot qareeb shaam hai
hujoome khaaso aam hai
yazeede bad kalaam hai
ye waqte inteqaam haio
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....

rehaan o sarwar e aza
jo shaam pahuncha khafila
sare hussain ne kaha
ulat de takht shaam ka
tu hausla na haarna
sina pe hoo to kya....
behan mai saath....
Noha - Behan Mai Saath
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online