اے ذوالجناح کیا کیا اپنے سوار کو
دلبندِ مصطفیٰ شاہِ گردو وقار کو

جب جانتا تھا مر گئے سب سب خاص و اقربائ
پھر کس پہ چھوڑ آیا غریبُ ادّیار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

مقتل سے دوڑتا ہوا خالی پھرا ہے تُو
وسواس آ رہا ہے دلِ بے قرار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

اے ذوالجناح اس طرح سے آنے کا فائدہ
جب خیریت سے لوٹ کے نہ لایا سوار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

کیوں سر جھُکائے شرم سے روتا ہے زار زار
کیا خاک پر گرا دیا اپنے سوار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

کیا ہو گئی یتیم سکینہ بلا نصیب
کیوں رو رہا ہے دیکھ کے اُس دلفگار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

جس منزلِ آخیر کا بچپن سے شوق تھا
کیا اُس جگہ اُتارا ہے اپنے سوار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔

اے قیس اہلِ شام نے اندھیار کر دیا
گُل کر دیا نبی کے چراغِ مزار کو
اے ذوالجناح ۔۔۔۔۔


ay zuljana kya kiya apne sawar ko
dilbande mustufa shahe gardo viqar ko

jab jaanta tha margaye sab khaish o akhroba
phir kis pe chor aaya ghareeb ud dayaar ko
ay zuljana....

maqtal se daudta hua khaali phira hai tu
viswas aa raha hai dil e beqaraar ko
ay zuljana....

ay zuljana is tarha se aane ka fayeda
jab khairiat se laut ke na aaya sawaar ko
ay zuljana....

kyun sar jhukaye sharm se rota hai zaar zaar
kya khaak par gira diya apne sawaar ko
ay zuljana....

kya hogayi yateem sakina bala naseeb
kyun ro roha hai dekh ke us dilfigaar ko
ay zuljana....

jis manzile akheer ka bachpan se shauk tha
kya us jaga utaara hai apne sawaar ko
ay zuljana....

ay qais ahle shaam ne andhayr kar diya
gul kardiya nabi ke charaghe mazaar ko
ay zuljana....
Noha - Ay Zuljana
Shayar: Qais Zangipuri
Nohaqan: Mir Mohsin Ali
Download Mp3
Listen Online