العتش کی درِ خیمے سے صدا آنے لگی

مہرِ پُرتاب و تپش اپنے سفر پر جو چلا
روشنی ہو گئی دریا کا کنارہاچمکا
رفتہ رفتہ یہ سماں دھوپ کی شدت میں ڈھلا
ریت میں آگ لگی دشت حرارت سے جلا
گرم ہو کہ جو صحرا سے ہوا آنے لگی
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔

سُن کہ عباس بڑھے اشک فشاں سوئے حرم
دیکھا بچوں کی جو یہ تشنہ لبی کا عالم
خشک ہونٹوں پہ زباں پھیر رہے تھے پیہم
کہا شہزادی سکینہ نے یہ بادیدئہ نم
تین دن ہو گئے ہیں کر نہ سکے لب قلبی
میں بھی پیاسی ہوں چچا جان علی اصغر بھی
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔

ہائے عباس جھکائے سر شِہ کے قریب
پائوں پر شیر نے رکھ دی شاہِ والا کے جبیں
جاگ اُٹھا قلبِ وفادار میں پھر سوزِ یقیں
عرض کی رن کی رضا دو مجھے قبلہِ دیں
شِہ کو عباس کا اسرارِ رضا تھا درپیش
عشق کو مرحلہِ ہجرِ وفا تھا درپیش
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔۔


العتش کہتی ہے بالی سکینہ آقا
ٹوٹ جاتا ہے میرے دل کا نگینہ آقا
اب تو کچھ اور ہی کہتا ہے قرینہ آقا
آپ پر سایہِ سرکارِ مدینہ آقا
حُکم ہو جائے تو اس شان سے پانی لائوں
قید کر موجِ کوثر کی روانی لائوں
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔

تم چلے جائو گے رہ جائیں گے اک ہم تنہا
رنج پر رنج سہے جائیں گے اک ہم تنہا
آہ کس کس کا کیئے جائیں گے ماتم تنہا
ہم سے اُٹھے گا بہتر کا نہ یہ غم تنہا
کیا تمہیں بن کی بلائوں کے حوالے کر دوں
شمع روشن کو ہوائوں کے حوالے کر دوں
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔

جائو بھائی تمہیں اللہ و نبی کو سونپا
لو تمہیں سایہِ دامانِ علی کو سونپا
جو سبھی کا ہے خُدا اُسکے ولی کو سونپا
یعنی تم جس کی امانت ہو اُسی کو سونپا
ہم تو ہر حال میں ہیںصابر و شاکر عباس
لو علم اور خُدا حافظ و ناصر عباس
العتش کی درِ ۔۔۔۔۔


al atash ki dare qaimay se sada aane lagi

mehre purtaab o tapish apne safar par jo chala
roshni hogayi darya ka kanara chamka
rafta rafta ye sama dhoop ki shiddat may dhala
rayt may aag lagi dasht hararat se jala
garm hoke jo sehra se hawa aane lagi
al atash ki dare....

sunke abbas bade ask fishan suye haram
dekha bachon ki jo ye tashnalabi ka aalam
khuskh honton pe zaban phair rahe thay paiham
kaha shehzadi sakina ne ye ba deedae nam
teen din hogaye hai karna sake lab kalabi  
mai bhi pyasi hoo chacha jaan ali asghar bhi
al atash ki dare....

aaye abbas jhukaye hue sar sheh ke khareeb
paon par sher ne rakh di shahe wala ke jabeen
jaag utha qalbe wafadar may soz e yaqeen
arz ki ran ki raza do mujhe ay qibla e deen
sheh ko abbas ka israr e raza tha dar pesh
ishq ko marhale hijr wafa tha dar pesh  
al atash ki dare....

al atash kehti hai bali sakina aaqa
tooth jaata hai mere dil ka nageena aaqa
ab to kuch aur hi kehta hai kareena aaqa
aap par saaya e sarkar e madina aaqa
hukm hojaye to is shan se pani laun
qaid kar mauja e kausar ki rawani laun
al atash ki dare....

tum chale jaoge rehjayenge ek hum tanha
ranj par ranj sahejayenge ek hum tanha
aah kis kis ka kiye jayenge matam tanha
hum se uthega bahattar ka ne gham tanha
kya tumhe ban ki balaon ke hawale kardoo
shamma raushan ko hawaon ke hawale kardoo
al atash ki dare....

jao bhai tumhay allah o nabi ko saumpa
lo tumhay saaya e daaman e ali ko saumpa
jo sabhi ka hai khuda uske wali ko saumpa
yani tum jiski amanat ho usi ko saumpa
hum to har haal may hai saabe rashakil abbas   
lo alam aur khuda hafiz o nasir abbas
al atash ki dare....
Noha - Alatash Ki Dare Qaima

Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online